اکیس نومبر کو رشکئی کے مقام پر سی پیک منصوبے کے افتتاح کے موقع پر وزیر اعظم کا تاریخی اور شاندار استقبال کیا جائیگا ،اسد قیصر

اکیس نومبر کو رشکئی کے مقام پر سی پیک منصوبے کے افتتاح کے موقع پر وزیر اعظم کا تاریخی اور شاندار استقبال کیا جائیگا ،اسد قیصر

اکیس نومبر کو رشکئی کے مقام پر سی پیک منصوبے کے افتتاح کے موقع پر وزیر اعظم کا تاریخی اور شاندار استقبال کیا جائیگا ،اسد قیصر

سیاست ذاتی مفاد اور لالچ کیلئے نہیں علاقے کی خدمت ، ترقی اور اپنی مٹی پر امن لانے کیلئے کر رہا ہوں ،اپنے دور اقتدار میں ایک پیسے کی کرپشن نہیں کی روز محشر ایک ایک پیسے کا میں ذمہ دار رہونگا،پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار وفاقی حکومت میں پختونوں کو موثر نمائندگی مل چکی ہے ، ہماری حکومت دین اسلام کی سب سے زیادہ خدمت کر رہی ہے وزیر اعظم عمران خان نے اقوام متحدہ کے اجلاس میں اسلام کے حوالے سے جو تقریر کی تھی یہ امت مسلمہ کی نمائندگی کا واضح ثبوت ہے،سپیکر قومی اسمبلی کا خطاب

صوابی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 14 نومبر2020ء) سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کہا ہے کہ اکیس نومبر کو پشاور اسلام آباد موٹر وے پر رشکئی کے مقام پر سی پیک منصوبے کے افتتاح کے موقع پر وزیر اعظم عمران خان کا تاریخی اور شاندار استقبال کیا جائیگا ،اس موقع پر منعقدہ تاریخی جلسہ عام میں اضلاع صوابی اور نوشہرہ سے 80ہزار کارکنان پی ٹی آئی بھرپور انداز میں شرکت کرینگے۔اس منصوبے سے صوبے میں روزگار کے مواقع پیدا ہونے کے علاوہ تجارت کو فروغ ملے گا جب کہ تر قی اور خوشحالی کا دور دورہ ہو گا ۔ان خیالات کااظہار انہوں نے موضع کالا میں اے این پی کے مقامی رہنما محمد اقبال خان کی پی ٹی آئی میں شمولیت کے موقع پر منعقدہ اجتماع اور بعد ازاں موضع مانیری میں اکیس نومبر کو وزیر اعظم عمران خان کی سی پیک افتتاح کے موقع پر منعقدہ جلسے کے حوالے سے تیاریوں کے بارے میں کارکنوں کے ایک بڑے اجلاس سے خطاب کے دوران کیا۔انہوں نے کہا کہ رشکئی کے مقام پر سی پیک کا یہ منصوبہ دنیا کا ایک بہت بڑا اکنامک زون ہو گا ا س منصوبے میں چائنہ کے علاوہ دیگر ممالک کے بڑے بڑے سرمایہ کار سرمایہ کاری کرینگے چونکہ افغانستان جنگ اور بعد ازاں پاکستان میں دہشت گردی کے خلاف جنگ میں خیبر پختونخوا کے پختونوں کے گھر تباہ ہونے کے علاوہ ہماری معیشت سمیت تمام انفرا سٹرکچر کو نقصان پہنچا تھا اس لئے اب وقت آچکا ہے کہ جنگ سے تباہ حال پختونوں کے زخموں پر مرہم پٹی باندھ کر ان کی جانی و مالی قر بانیوں کا ازالہ کیا جا سکے عمران خان کے جلسے میں نوشہرہ سے چالیس ہزار جب کہ صوابی سے بھی چالیس ہزار کارکن شرکت کرینگے اور یہ ٹارگٹ پورا کر کے رہیں گے کارکن صوابی کے ہر یونین کونسل سے چار سو کارکن اس جلسے میں اپنی شرکت کو یقینی بنائیں۔انہوں نے کہا کہ موجودہ وقت میں چوبیس گھنٹے میں جو دو گھنٹے بجلی بند رہتی ہے یہ لوڈ شیڈنگ نہیں بلکہ لوڈ منیجمنٹ ہے جو بجلی سسٹم میں نہ آنے کی وجہ سے کی جارہی ہے صوابی میں وولٹیج کی کمی دور کرنے اور ستر سال تک بجلی کی سہولیات فراہم کرنے کے لئے تر بیلہ ڈیم ، گدون اور صوابی میں ایک ایک پاور ٹرانسفرمر منظور کر لئے گئے ہیں جب کہ بوسیدہ تاروں کی تبدیلی کے لئے ایک نیا لائن منظو ر کیا گیا ہے انہوں نے اے این پی کی طرف اشارہ کر تے ہوئے کہا کہ صوابی کو دوسرا گھر کہنے والوں نے دوسرے گھر کو تباہ کر دیا تھا اپنے دور حکومت میں صوابی کے لئے کچھ بھی نہیں کیا تھا جب صوبے میں پی ٹی آئی کی حکومت آئی تو بحیثیت صوبائی سپیکر گجو خان میڈیکل کالج ، وومن یونیورسٹی صوابی کے قیام کے علاوہ یونیورسٹی آف صوابی کی نئی عمارت کے لئے اراضی خریدی گئی جو پایہ تکمیل کو پہنچ رہی ہے ۔باچا خان میڈیکل کالج شاہ منصور کو اپ گریڈ کر دیا گیا انہوں نے کہا کہ ڈیڑھ ارب روپے کی لاگت سے صوابی کے گھر گھر گیس پہنچایا جائیگا انہوں نے کہا ہم نے چین ، افغانستان اور ایران سمیت دیگر ممالک سے تجارت کو فروغ دیا تاکہ روزگار کے نئے مواقع پید ا ہو کر بے روزگاری کا خاتمہ کیا جا سکے سی پیک کے منصوبے کے تحت وسط ایشیاء افغانستان اور دیگر ممالک کے علاوہ چکدرہ ، سوات اور چترال تک موٹر وے بند جائیگا۔انہوں نے کہا کہ میں سیاست ذاتی مفاد اور لالچ کے لئے نہیں کر رہا ہوں بلکہ علاقے کی خدمت ، ترقی اور اپنی مٹی پر امن لانے کے لئے کر رہا ہوں اپنے دور اقتدار میں ایک پیسے کی کرپشن نہیں کی روز محشر ایک ایک پیسے کا میں ذمہ دار رہونگا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار وفاقی حکومت میں پختونوں کو موثر نمائندگی مل چکی ہے سپیکر قومی اسمبلی کا عہدہ سب سے بڑا دوسر ا منصب ہے جب کہ اس وقت وفاقی کابینہ میں پختون وزراء کی تعداد نو ہے جو کہ یہ صوبے اور عوام کے لئے فخر اور اعزاز کی بات ہے۔انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت نے تعلیمی نظا م میں سیرت النبیؐ شامل کیا اسی طرح پارلیمنٹ کا اجلاس شروع کرنے سے پہلے درس قرآن کے بعد اب درس حدیث کا آغاز کر دیا گیا ہے انہوں نے کہا کہ ہم سب سے اچھے مسلمان ہے ہماری حکومت دین اسلام کی سب سے زیادہ خدمت کر رہی ہے وزیر اعظم عمران خان نے اقوام متحدہ کے اجلاس میں اسلام کے حوالے سے جو تقریر کی تھی یہ امت مسلمہ کی نمائندگی کا واضح ثبوت ہے۔ اسی طرح ہماری حکومت نے فرانس اور دیگر ممالک میں پیغمبرؐ کی شان میں گستاخیوں کے خلاف واضح موقف اختیار کرکے اس اقدام کے خلاف آواز بلند کی ہے ۔

admin

Leave a Reply

Close
Show Buttons
Hide Buttons